برطانیہ میں کوٹلی کشمیر کی بیٹی کونسلر نسیم ایوب میئر آف لوٹن منتخب ہو گئیں

لوٹن۔ یوکے ( رپورٹ:۔ ساجد جنجوعہ کشمیری )برطانیہ میں کوٹلی کشمیر کی بیٹی کونسلر نسیم ایوب میئر آف لوٹن منتخب ہو گئیں۔ کشمیری نژاد برطانوی خاتون کونسلر محترمہ نسیم ایوب چوہدری صاحبہ انگلینڈ برطانیہ کی کاؤنٹی بیڈفورڈ شائر کے خوبصورت شہر لوٹن بارو کونسل کی میئر بن گئی ہیں۔ Mayor of Luton Cllr Naseem Ayub ۔ ان سے پہلے اس شہر کے میئر انکے شوہر کونسلر محمد ایوب چوہدری ایڈووکیٹ تھے۔جن سے انہوں نے میئرشپ کا چارج لیا۔ جو کہ تاریخی طور پر منفرد اعزاز ہے۔ لیبر پارٹی سے تعلق رکھنے والی خاتون کونسلر میئر آف لوٹن کشمیر ی، پاکستانی اور بنگلہ دیشی کمیونٹی کے علاوہ مقامی کمیونٹی میں بھی بے حد مقبول اور ہر دلعزیز ہیں۔ وہ اس وقت لوٹن شہر کی فرسٹ سیٹیزن اور ملکۂ برطانیہ کی نمائندہ ہیں۔ لوٹن کا اپنا فٹبال اسٹیڈیم اور انٹرنیشنل ائرپورٹ ہے۔برطانیہ کا سب سے پہلے موٹروے M1 لوٹن کے پاس سے ہی گزرتا ہے جبکہ ریلوے نظام سے بھی منسلک ہے۔ لوٹن برطانوی دارالحکومت لندن سے 33 میل کی مسافست پر واقع ہے جبکہ کچھ اتنا ہی فاصلہ ہیتھرو ائرپورٹ لندن کا ہے۔ دو لاکھ سے زائد نفوس پر مشتمل آبادی والے اس شہر میں کوٹلی آزاد کشمیر سے تعلق رکھنے والے کشمیری ریاستی باشندوں کی ایک بڑی تعداد مقیم ہے۔ اسی اکثریت کی نسبت سے اسے منی کوٹلی بھی کہا جاتا ہے۔ کشمیر کی بیٹی Daughter of Kashmir خاتون میئر آف لوٹن محترمہ نسیم ایوب چوہدری کا تعلق بھی کوٹلی شہر سے ہے۔ گلہار شریف ، کوٹلی آزاد کشمیر Kotli Azad Kashmir ان کا آبائی علاقہ ہے۔ کوٹلی کو مدینۃ المساجد بھی کہا جاتا ہے۔ لوٹن بارو کونسل UK کی پہلے میئر منتخب ہونے کی تاریخ 1876 ء سے شروع ہوتی ہے جبکہ 1886 ء میں کوئی خاتون اس شہر کی پہلی میئر منتخب ہوئی تھی۔ اس کے بعد اب 2018ء میں یہ پہلا موقع ہے کہ کوئی ایشیئن نژاد مسلمان خاتون 142 سالہ تاریخ میں لوٹن کی میئر بنی ہے جو کہ ایک ریکارڈ ہے۔ اگرچہ ان سے پیشتر چند ایک کشمیری نژاد برطانوی ایشین مسلم خواتین ڈپٹی میئر منتخب ہوتی رہی ہیں مگربیگم نسیم ایوب چوہدری کو یہ اعزاز حاصل ہوا ہے کہ وہ میئر کے عہدۂ جلیلہ پر پہلی مرتبہ فائز ہوئی ہیں۔ اس سے پیشتر یورپی یونین کے الیکشن میں برطانوی امیدوار ہ کی حیثیت سے بھی حصہ لے چکی ہیں۔ مگر ایوان میں نہ پہنچ سکیں۔ کونسلر نسیم ایوب چوہدری کے میئر منتخب ہونے پر انہیں برطانیہ بھر سے مبارکباد کے پیغامات ملے۔ کمیونٹی نے مٹھائی اور پھولوں کے گلدستے پیش کئے جبکہ آزاد کشمیر اور پاکستان سے بھی حکومتی ارباب اختیار، وزرائے حکومت، اعلی افسران، نمائندگان، بلدیاتی اداروں کے ایڈمنیسٹریٹرز، سابق چیئرمین و کونسلرز،سیاسی و سماجی شخصیات اور سول سوسائٹی نے بھی میئر بننے پر مبارکباد پیش کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں